Press Release

Media Update: United Nations Pakistan, 30 July 2021

30 July 2021

This Media Update includes: 

  • UNODC Statement of the Executive Director ‎on World Day Against Trafficking in Persons
  • UNODC - PRESS RELEASE : World Day against Trafficking in Persons – Pakistan: 30 July 2021, Islamabad

UNODC

Statement of the Executive Director ‎

World Day Against Trafficking in Persons

Statement of the Executive Director of the United Nations Office on Drugs and Crime

Ghada Waly

Each and every victim of trafficking in persons has a story we should listen to. Victims’ voices are key to preventing trafficking, supporting survivors, and bringing perpetrators to justice. Traffickers choose their victims from among the vulnerable, exploiting desperation and lack of awareness. The majority of those targeted are people in economic need who are misled. Almost two-thirds of detected victims are women and girls, and the share of children has tripled in the last 15 years. But despite their real and perceived vulnerabilities, survivors of trafficking are examples of strength, courage, and resilience.‎

On this year’s World Day against Trafficking in Persons, I salute victims as they rebuild their own lives and help protect those of others. The UN Office on Drugs and Crime has launched a campaign titled Victims’ Voices Lead the Way’ to put a spotlight on victims’ untold stories, and on their roles in the fight against trafficking. Member States must engage, listen, and learn from survivors, and support victim-led organizations. The COVID-19 pandemic has deepened vulnerabilities to trafficking, making‎ victims’ contributions more critical than ever.‎

At UNODC, we continue to assist countries and all stakeholders in implementing the Trafficking in Persons Protocol, and in developing victim-centred approaches. Through the UN Voluntary Trust Fund for Victims of Trafficking in Persons, we also provide essential support to victims, and help empower them as part of the response. I thank our partners who have contributed to the Fund and call on all Member States to support it.‎

I also call on you to join our campaign, and to share and amplify victims’ stories. Inspired and guided by the resilience of those who survived, we can build the resilience of our societies to trafficking in persons, help prevent and alleviate suffering, end impunity, and achieve justice.‎

 

***

UNODC

PRESS RELEASE

“Victim’s Voices Lead the Way”

World Day against Trafficking in Persons – Pakistan: 30 July 2021, Islamabad

Under the EU funded Global Action to Address Trafficking in Persons and the Smuggling of Migrants (GLO.ACT – Asia and the Middle East), the United Nations Office on Drugs and Crime (UNODC),  commemorated World Day against Trafficking in Persons (TIP) in collaboration with the Federal Investigation Agency during a seminar held on Friday 30 July 2021 from 9.30- 13.45 at Serena hotel, Islamabad.

“Victim’s Voices Lead the Way” is this year’s World Day against TIP theme. It’s a theme that puts victims of human trafficking at the centre and highlights the importance of listening to and learning from survivors of human trafficking and the crucial role they play in establishing effective measures to prevent this crime, identify and rescue victims and support them on their road to rehabilitation. 

During the commemoration seminar, key messages from survivors of trafficking and other relevant stakeholders were highlighted. The event also presented the National Action Plan to combat human trafficking and migrant smuggling (2021-2025) adopted by the Government which provides a comprehensive coordination framework for all stakeholders tasked with addressing Trafficking in Persons.

During his welcome remarks, Dr. Jeremy Milsom, Representative UNODC Country Office Pakistan said that, “The United Nations Office on Drugs and Crime is committed to advancing action to bring traffickers to justice while protecting and supporting their victims.  The rights of victims must come first – be they the victims of traffickers, smugglers, or of modern forms of slavery or exploitation”.  

He further said that: “Almost every country has national human trafficking laws, yet people continue to be trafficked – most of them, women, and girls. We welcome the progress made by Pakistan, in particular the Federal Investigation Agency, in tackling human trafficking, through implementing the Prevention of Trafficking in Persons Act 2018 and its rules, and the National Action Plan to combat human trafficking and migrants smuggling (2021-2025)”.

Learning from victims’ experiences and turning their suggestions into concrete actions will lead to a more victim-centred and effective approach in combating human trafficking.

The Director General FIA, Sanaullah Abbasi, during his speech said that: “FIA and UNODC have been partners for more than a decade to curb human trafficking and migrants smuggling.  Through this partnership we have achieved many goals including the enactment of laws on TIP and Smuggling of Migrants in 2018. The partnership will further help FIA to build its capacity to fight the menace of human trafficking”.

The seminar was attended by the senior representatives of FIA, UNODC, the European Union, Provincial Social Welfare and Labour departments, provincial police, representatives from federal ministries including the Ministry of Interior, Ministry of Overseas Pakistanis and Human Resource Development and ICMPD.

The Global Action against Trafficking in Persons and the Smuggling of Migrants – Asia and the Middle East (GLO.ACT-Asia and the Middle East) is a four-year (2018-2022), €12 million joint initiative by the European Union (EU) and the United Nations Office on Drugs and Crime (UNODC) being implemented in partnership with the International Organization for Migration (IOM) in up to five countries: Islamic Republic of Afghanistan (Afghanistan), Islamic Republic of Iran (I.R. of Iran), Republic of Iraq (Iraq), Islamic Republic of Pakistan (Pakistan). GLO.ACT-Bangladesh is a parallel initiative also financed by the EU and implemented with IOM.

The project builds on a global community of practice set in motion in GLO.ACT 2015-2019 and assists governmental authorities and civil society organizations in targeted, innovative, and demand-driven interventions: sustaining effective strategy and policy development, legislative review and harmonization, capability development, and regional and trans-regional cooperation. The project also provides direct assistance to victims of human trafficking and vulnerable migrants through the strengthening of identification, referral, and protection mechanisms. The project is fully committed to mainstreaming Human Rights and Gender Equality  considerations across all of its activities. 

The project is funded by the European Union.

*****END*****

For more information, please contact:

Shahida Gillani, National Project Officer

Email: Shahida.gillani@un.org 

For more information, please visit:

GLO.ACT - Asia and Middle East

Email: glo.act@un.org

Twitter:  @glo_act

Nation-wide awareness-raising campaign in Pakistan, please like and share:

Facebook: https://www.facebook.com/UNODCCOPAK.GloAct/

Twitter: @GLOACTPakistan

For further information, please contact:-

Ms. Rizwana Rahool, Communications Officer, UNODC Pakistan, cell: 0301 8564255, email: rizwana.asad@un.org

*** 

 

’’متاثرین کی آواز مشعل راہ ہے‘‘

انسانی تجارت کے خلاف عالمی دن – پاکستان، 30 جولائی 2021، اسلام آباد

انسانی تجارت اور مہاجرین کی  اسمگلنگ سے نمٹنے کے لیے یوروپی یونین کے مالی تعاون سے چلائے جانے والے گلوبل ایکشن (GLO.ACT - ایشیا اور مشرق وسطی) کے تحت اقوام متحدہ کے دفتر برائے انسداد منشیات اور جرائم (یو این او ڈی سی) نے وفاقی تحقیقاتی ایجنسی کے تعاون سے انسانی تجارت کے خلاف عالمی دن منایا اور اس سلسلے میں سیرینا ہوٹل ، اسلام آباد میں جمعہ 30 جولائی 2021 ء کو 9.30تا 13.45 ایک سیمینارکا انعقاد کیا گیا۔

اس سال انسانی تجارت کے خلاف عالمی دن کا مرکزی خیال ’’متاثرین کی آواز مشعل راہ ہے‘‘ رکھا گیا  جو انسانی تجارت کے متاثرین کو مرکزِ نگاہ بناتا ہے اور اس سے بچ جانے والوں کے تجربات کو سننے اور ان سے سیکھنے کی اہمیت کو اجاگر کرتا ہے، اور اس ساتھ ہی ساتھ اس جرم کے انسداد، متاثرین کو شناخت کرنے اور انہیں بچانے اور بحالی میں انہیں سہارا فراہم کرنے کے لیے موثر اقدامات وضع کرنے کے حوالے سے  ان کے اہم کردار کو بھی واضح کرتا ہے۔

اس یادگاری سیمینار کے دوران انسانی تجارت سے بچ جانے والے افراد اور دیگر متعلقہ اسٹیک ہولڈرز کے کلیدی پیغامات کو اجاگر کیا گیا۔ مذکورہ تقریب میں انسانی تجارت اور مہاجرین کی اسمگلنگ سے نمٹنے کے لیے حکومت کا منظور کردہ  نیشنل ایکشن پلان(2025 – 2021) بھی پیش کیا گیا جو انسانی تجارت سے نمٹنے والے تمام اسٹیک ہولڈرز کے لیے ایک جامع رابطہ کاری کا فریم ورک فراہم کرے گا۔

ڈاکٹر جیریمی میلسم ، نمائندہ یو این او ڈی سی کنٹری آفس پاکستان اپنےافتتاحی  کلمات کے دوران کہا کہ "اقوام متحدہ کے انسداد منشیات اور جرائم کا دفتر ایسے متاثرین کو تحفظ اور معاونت فراہم  کرتے ہوئے انسانی تجارت کے اسمگلروں کو انصاف کے کٹہرے میں لانے کی کارروائی کرنے کے لیے پُر عزم ہے۔ متاثرین کے حقوق کو سب سے پہلے اہمیت دینی چاہیےخواہ  وہ انسانی تجارت کے اسمگلروں سے متاثر ہوں یا غلامی یا استحصال کی جدید اقسام  کے شکار ہوں۔"

انہوں نے مزیدیہ کہا کہ"تقریباً ہر ملک میں انسانی تجارت کے قومی قوانین موجود ہیں  لیکن پھر بھی لوگوں کو اسمگلنگ کیا جاتا ہے جن میں سے اکثر خواتین اور لڑکیاں شامل ہوتی ہیں۔ انسانی تجارت کی روک تھام کے ایکٹ 2018اور اس کے قواعد کے علاوہ انسانی تجارت اور مہاجرین کی  اسمگلنگ سے نمٹنے کےلیے نیشنل ایکشن پلان(2021-2025)پر عمل درآمد کے ذریعے پاکستان خصوصاً  وفاقی تحقیقات ادارہ  کی طرف سے کی جانے والی پیشرفت کا ہم خیرمقدم کرتے ہیں۔"

متاثرین کے مشاہدات سے سیکھنے اور ان کی تجاویز کو ٹھوس کارروائیوں میں ڈھالنے سے انسانی تجارت کے خلاف لڑنے کے لیے ایک ایسا لائحہ عمل میسر آئے گا جو موثر ہو گا اور جس میں متاثرین مرکز نگاہ ہوں گے۔

ایف آئی اے کے ڈائریکٹر جنرل ثنا اللہ عباسی نے اس موقع پر بات کرتے ہوئےکہاکہ"ایف آئی اے اور اقوام متحدہ کا آفس برائے انسداد منشیات و جرائم (یو این او ڈی سی) انسانی تجارت اور مہاجرین کی اسمگلنگ کے تدارک کے لیے تقریباً ایک دہائی سے شراکت داروں کے طور پر کام کر رہے ہیں۔ اس شراکت داری کے ذریعے ہم نے کئی اہم اہداف حاصل کیے ہیں جس میں 2018 میں انسانی تجارت اور مہاجرین کی اسمگلنگ کے حوالے سے کی جانے والی قانون سازی بھی شامل ہے۔ یہ شراکت داری ایف آئی اے کو انسانی تجارت کے عفریت سے نمٹنے کے لیے اپنی صلاحیت کو مضبوط بنانے میں مدد دے گی۔"

اس سیمینار میں ایف آئی اے، اقوام متحدہ کے دفتربرائے انسداد منشیات و جرائم (یو این او ڈی سی)، یورپی یونین، صوبائی سوشل ویلفیئر اور لیبر ڈیپارٹمنٹس، صوبائی پولیس، وفاقی وزارتوں، بشمول وزارت داخلہ، وزارت سمندر پار پاکستانیز اور انسانی وسائل کی ترقی اور آئی سی ایم پی ڈی کے نمائندگان نے بھر پورشرکت کی۔

انسانی تجارت اور مہاجرین کی اسمگلنگ –ایشیا اور مشرق وسطیٰ (جی ایل او۔ ایکٹ – ایشیا اور مشرق وسطیٰ) کے خلاف عالمی ایکشن پلان 12 ملین یورو کا یورپی یونین (ای یو) اور اقوام متحدہ کے دفتر برائے انسداد منشیات و جرائم (یو این او ڈی سی) کا چار سالہ (2022- 2018) مشترکہ منصوبہ ہےجس کا اطلاق انسانی ہجرت کی بین الاقوامی تنظیم (آئی او ایم) کی شراکت سے دنیا کے پانچ ممالک، اسلامی جمہوریہ افغانستان (افغانستان)، اسلامی جمہوریہ ایران (آئی آر ایران)، جمہوریہ عراق (عراق)، اسلامی جمہوریہ پاکستان (پاکستان)، میں کیا جا رہا ہے۔ جی ایل او۔ ایکٹ – بنگلہ دیش ایک متوازی منصوبہ ہے جسے یورپی یونین کی جانب سے مالی معاونت فراہم کی جا رہی ہے اور آئی او ایم کے تعاون سے عمل درآمدکیا جا رہا ہے۔

یہ منصوبہ مشترکہ عزائم کاحامل ایک عالمی گروپ تشکیل دیتا ہے، جیسا کہ جی ایل او۔ ایکٹ 2019-2015 میں اس کا آغاز کیا گیا ہے، اور حکومتی حکام اور سول سوسائٹی کی تنظیموں کو ایک اہدافی، نئے طریقے اور طلب کی بنیاد پر مشتمل اقدام؛ موثر منصوبہ اور پالیسی سازی کو برقرار رکھنے؛ قانون سازی کے جائزے  اور ہم آہنگی، صلاحیت بڑھانے، اور علاقائی اور بین الاقوامی تعاون میں مدد فراہم کرتا ہے۔ یہ منصوبہ انسانی تجارت کے متاثرین اورمسائل کے شکار مہاجرین  کو شناخت، ریفرل اور تحفظ کے طریقوں کے ذریعے مدد بھی فراہم کرتا ہے۔ یہ منصوبہ انسانی حقوق اور صنفی برابری کو اپنی تمام تر کارروائیوں کے مرکزی دھارے میں شامل کرنے کے لیے پوری طرح پرعزم ہے۔

یہ منصوبہ یورپی یونین کی مالی معاونت سے سر انجام دیا جا رہا ہے۔

***** اختتام *****

مزید معلومات کے لیے رابطہ کریں:

شاہدہ گیلانی، نیشنل پروجیکٹ آفسیر

ای میل: shahida.gillani@un.org

مزید معلومات کے لیے وزٹ کریں:

Glo.Act – Asia and Middle East

ای میل: glo.act@un.org

ٹوئیٹر: @glo_act

پاکستان بھر میں قومی شعور کی بیداری کی آگاہی کے لیے، برائے مہربانی لائیک کریں اور شئیر کریإ

فیس بک: https://www.facebook.com/UNODCCOPAK.GloAct/

ٹوئیٹر:@GLOACTPakistan

 

Ms. Rizwana Rahool, Communications Officer, UNODC Pakistan, cell: 0301 8564255, email: rizwana.asad@un.org

Media Update: United Nations Pakistan, 30 July 2021

UN entities involved in this initiative

UNODC
United Nations Office on Drugs and Crime

Goals we are supporting through this initiative